عبدالرحمٰن صابر قرنیؒ (1927 تا 1995)

آپ جنوری 1927 میں  لاہور میں ایک اسلامی گھرانے میں پیدا ہوئے۔ بچپن سے ہی دین اسلام سے والہانہ وابستگی تھی اور نوجوانی میں تحریک اسلامی سے وابستہ ہو گئے اور جماعت اسلامی کے سرگرم رکن بن گئے۔ اسلام کی  تعلیمات کو عام کرنے کی غرض سے 1950 کی دہائی کے آغاز میں ایبٹ آباد منتقل ہوگئے۔ یہاں ایک اسلامی لائبریری قائم کی اور لوگوں کو دین کی تعلیم دینے میں سرگرم ہو گئے۔ 1955 میں  پھر اچھرہ لاہور منتقل ہوئے اور مولانا مودودیؒ کے رفقائے کار میں شامل  ہوگئے۔ یہاں ادارہ بتول کے روح رواں اور ماہنامہ بتول کے مدیر منتظم مقرر ہوئے۔ پھر بچوں کیلئے ماہنامہ نور شائع کرنے کا اہتمام کیا۔ 1970 میں ماہنامہ الحسنات کا اجرا کیا جو مرد و خواتین اور بچوں سب کیلئے مفید اسلامی اور اصلاحی رسالہ تھا۔ اسی ماہنامے میں صابر قرنی صاحب نے  درس قرآن کا سلسلہ شروع کیا جس میں لفظ بہ لفظ ترجمہ شائع کیا جاتا تھا جو بعد میں تعلیم القرآن کی صورت میں منظر عام پر آیا۔ اسی ماہنامہ کے ساتھ ساتھ ایک ادارہ ادارہ الحسنات کے نام سے بھی قائم کیا جس کے تحت خاص طور پر بچوں کیلئے بے شمار کتب شائع کرنے کا اہتمام کیا۔ان میں آپ کی بھی بہت سی کتب شامل تھیں۔ 1985 میں حسنات اکیڈمی (pvt) لمیٹڈ قائم کی اور اس کے تحت بیسیوں اسلامی اور اصلاحی کتب شائع کیں، ان میں بچوں کی کتب نمایاں تھیں۔ 1986 میں ادارہ تعلیم القرآن کی بنیاد رکھی اور قرآن کی تعلیمات کو عام کرنے کیلئے سرگرم عمل ہو گئے۔ تعلیم القرآن کے سلسلے میں سب سے پہلےپارے مرتب و شائع کیے جن کا بڑا ماخذ ماہنامہ الحسنات کے دروس قرآن تھے جو وہ گزشتہ کم وبیش 15 سالوں سے مرتب کرتے آئے تھے۔اسی کام کو پایۂ تکمیل تک پہنچاتے آپ جنوری 1995 میں خالق حقیقی سے جا ملے۔